Urdu Shayari SMS

First Intro:

                      In this post, we will provide you Urdu Shayari SMS. our Urdu Shayari SMS is the best choice for you.I hope you will enjoy Urdu Shayari SMS.
Urdu Shayari SMS
Urdu Shayari SMS 

ترے در سے اٹھ کر جدھر جاؤں میں
چلوں دو قدم اور ٹھہر جاؤں میں

سنبھالے تو ہوں خود کو تجھ بن مگر
جو چھو لے کوئی تو بکھر جاؤں میں

اگر تو خفا ہو تو پروا نہیں
ترا غم خفا ہو تو مر جاؤں میں

تبسم نے اتنا ڈسا ہے مجھے
کلی مسکرائے تو ڈر جاؤں میں

مرا گھر فسادات میں جل چکا
وطن جاؤں تو کس کے گھر جاؤں میں

خمارؔ ان سے ترک تعلق بجا
مگر جیتے جی کیسے مر جاؤں میں


Urdu Shayari SMS
 Urdu Shayari SMS

گُم ہی نہ ہو گئی ہو مِری رَہ گُزر کہیں
میں ہُوں کہیں، غُبار کہیں،، ہم سفر کہیں

جذبِ نطر کا کر تو رہے ہیں وہ امتحاں
رُک ہی نہ جائے گردشِ شام و سَحر کہیں

سمجھا ہر اِک یہی کہ تخاطب مُجھی سے ہے
مرکوُز یُوں ہُوئی نِگہِ مُعتبر کہیں

تھی کچھ تو مصلحت جو نگاہیں نہ مِل سکِیں
مُجھ کو غلط سمجھ لے نہ وہ کم نظر کہیں

غم دے کے چھین لیں یہ نہیں اُن کے بس کی بات
مِٹتا ہے دل سے داغِ غمِ مُعتبر کہیں

ہم تو مَنا ہی لیں گے اُنہیں یہ یقین ہے
اور ایک بار رُوٹھ گئے ہم اگر کہیں


Urdu Shayari SMS
Urdu Shayari SMS 

شہر کے سارے مُعتبر آخر اُسی طرف ہُوئے
جانبِ لشکرِ عُدو، دوست بھی صف بہ صف ہُوئے

جاں سے گُذر گئے مگر بھید نہیں کُھلا کہ ہم
کِس کی شکار گاہ تھے، کِس کے لئے ہدف ہُوئے

مَشہدِ عِشق کے قریب، صُبح کوئی نہیں مِلا
وہ بھی، کہ جن کے ضامنی اہلِ قُم و نجَف ہُوئے

اب تو فقط قیاس سے راہ نکالی جائے گی
جن میں تھیں کچھ بَشارتیں، خواب تو وہ تلَف ہُوئے

خانہء بے چراغ بھی سب کی نظر میں آ گیا
تیرے قیام کے طفیل ہم بھی تو با شرف ہُوئے

Urdu Shayari SMS
 Urdu Shayari SMS

کوئی بھی شکل مرے دل میں اتر سکتی ہے
اک رفاقت میں کہاں عمر گزر سکتی ہے

تجھ سے کچھ اور تعلق بھی ضروری ہے مرا
یہ محبت تو کسی وقت بھی مر سکتی ہے

میری خواہش ہے کہ پھولوں سے تجھے فتح کروں
ورنہ یہ کام تو تلوار بھی کر سکتی ہے

ہو اگر موج میں ہم جیسا کوئی اندھا فقیر
ایک سکے سے بھی تقدیر سنور سکتی ہے

صبح دم سرخ اجالا ہے کھلے پانی میں
چاند کی لاش کہیں سے بھی ابھر سکتی ہے

Urdu Shayari SMS
Urdu Shayari SMS 

شکست زندگی ویسے بھی موت ہی ہے نا
تو سچ بتا یہ ملاقات آخری ہے نا

کہا نہیں تھا مرا جسم اور بھر یا رب
سو اب یہ خاک ترے پاس بچ گئی ہے نا

تو میرے حال سے انجان کب ہے اے دنیا
جو بات کہہ نہیں پایا سمجھ رہی ہے نا

اسی لیے ہمیں احساس جرم ہے شاید
ابھی ہماری محبت نئی نئی ہے نا

یہ کور چشم اجالوں سے عشق کرتے ہیں
جو گھر جلا کے بھی کہتے ہیں روشنی ہے نا

میں خود بھی یار تجھے بھولنے کے حق میں ہوں
مگر جو بیچ میں کم بخت شاعری ہے نا

میں جان بوجھ کے آیا تھا تیغ اور ترے بیچ
میاں نبھانی تو پڑتی ہے دوستی ہے نا

Urdu Shayari SMS
 Urdu Shayari SMS

مجھےتم چھوڑ مت دینا ہزاروں دوریاں آئیں
میرا چہرہ بھلا دینا میری یادیں بچا لینا

جو لمحے درد دیتےہوں انہیں بیشک بھلا دینا
جو لمحے آس دیتےہوں انہیں دل سے لگا لینا

کہیں بھی دور رہ لینا بہت مجبور رہ لینا
تعلق توڑ مت دینا مجھےتم چھوڑ مت دین

Urdu Shayari SMS
 Urdu Shayari SMS

کسی سے دور جانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے
گزارے پل بھلانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

جو بھٹکے راہ سے پنچھی گھنے جنگل میں آ بیٹھے
انھیں رستے پہ لانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

مری خاطر ہو کیوں جگتے ستارو تم تو سو جاؤ
مجھے تو نیند آنے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

مرے دل کے طلب گارو ذرا سا حوصلہ کرلو
دوبارہ دل لگانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

ان حسن کے اسیروں کی سزائیں لمبی ہوتی ہیں
کہ دل کے قیدخانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

کبھی تو ہاتھ اٹھتے ہی دعا مقبول ہو جائے
کبھی رب کو منانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

کبھی صدیاں گزرنے میں تو اک پل بھی نہیں لگتا
کبھی اک پل بِتانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

کسی کو قہقہوں سے ہی کبھی فرصت نہیں ملتی
کسی کو مسکرانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

لٹا دیتے ہیں راہِ عشق میں دنیا بھی جو اپنی
انھیں دنیا بسانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

یہ پوچھو ہجر کے ماروں سے کیسے رات کٹتی ہے
سحر کے جگمگانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

یہ کاریگر بناتا ہے محل سب کے مگر اِس کو
خود اپنا گھر بنانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

میں طوفانوں سے ٹکرا کر بڑی مشکل میں ہوں باسط
کہ اب شمع جلانے میں بڑا ہی وقت لگتا ہے

Urdu Shayari SMS
Urdu Shayari SMS

آہن کی سرخ تال پہ ھم رقص کر گۓ
تقدیر تیری چال پہ ھم رقص کر گۓ

پنچھی بنے تو رفعت افلاک پر اڑے
اہل زمیں کے حال پہ ھم رقص کر گۓ

کانٹوں سے احتجاج کیا ھے کچھ اس طرح
گلشن کی ڈال ڈال پہ ھم رقص کر گۓ

واعظ فریب شوق نے ھم کو لبھا لیا
فردوس کے خیال پہ ھم رقص کر گۓ

ہر اعتبار حسن نظر سے گزر گۓ
ہر حلقہ ہاۓ جال پہ ھم رقص کر گۓ

مانگا بھی کیا تو قطرہ ء چشم تصورات
ساغر تیرے سوال پی ھم رقص کر گۓ

0 Comments